May 25, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/rubbernurse.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

گذشتہ سوموار کو اسرائیل کی طرف سے دمشق میں ایرانی سفارت خانے پرخونی حملے کے بعد ایرانی عہدیدار بار باراسرائیل کو سنگین نتائج کی دھمکیاں دے رہے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ اس حملے کا رد عمل تکلیف دہ ہوگا تاہم تہران عملی طور پرکوئی خاص کارروائی نہیں کرسکا ہے۔

’اسرائیلی سفارت خانے اب محفوظ نہیں رہے‘

ایران کے سپریم لیڈر کے چیف ایڈوائزر برائے عسکری امور میجر جنرل رحیم صفوی نے دمشق میں تہران کے سفارت خانے پرحملے کےردعمل میں کہا کہ اسرائیلی سفارت خانے اب محفوظ نہیں ہیں۔

اتوار کو اسرائیلی حملے میں ہلاک ہونے والوں کے لیے ایک یادگاری تقریب میں صفوی نے کہا کہ امریکہ اور اسرائیل ’مزاحمتی محور‘ کا مقابلہ کرنے میں ناکام رہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ اب جو واقعات رونما ہو رہے ہیں وہ گزشتہ چار دہائیوں سے بالکل مختلف ہیں۔

جنرل صفوی نے کہا کہ نئے واقعات خطے کے مستقبل کی تشکیل کریں گے۔ غزہ کا تنازعہ عالمی سلامتی کی حرکیات کو نئی شکل دے رہا ہے۔

ایرانی عہدیدار کا یہ دھمکی آمیزبیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب انٹیلی جنس معلومات سے پتا چلا ہے کہ ایران شاہد ڈرونز اور کروز میزائلوں کے ذریعے جوابی حملہ کرنے کی منصوبہ بندی کر رہا ہے۔

امریکی حکام کا کہنا ہے کہ ممکنہ طور پر متعدد ممالک میں اسرائیلی قونصل خانے اور سفارت خانے ایرانی حملوں کا نشانہ بن سکتے ہیں۔

نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق کچھ امریکی حکام نے کہا کہ رمضان کے اختتام سے پہلے یعنی اگلے چند دنوں کے اندر ایران کا رد عمل آسکتا ہے۔

یہ ابھی تک معلوم نہیں ہے کہ آیا ایران کے میزائل اور ڈرون شام، عراق یا شاید براہ راست ایرانی سرزمین سے داغے جائیں گے۔

یاد رہے کہ کچھ امریکی فوجی تجزیہ کاروں نے تجزیہ کیا تھا کہ ایران اپنے ایجنٹوں کو عراق اور شام میں امریکی افواج پر حملوں کے بجائے خود اسرائیل پر حملہ کرے گا۔

ایران نے اس سے قبل شام اورعراق کی سرزمین کو امریکی مفادات پرحملوں کے خلاف استعمال کیا۔ اس نوعیت کے حماس کےخلاف اسرائیلی جنگ کے بعد چار مہینوں کے دوران 170 سے زائد حملے کیے۔

ایک اسرائیلی دفاعی اہلکار نے کہا کہ اسی نتیجے پر پہنچے ہیں کہ ایران خود حملہ کرے گا اور اس کے قریبی اتحادی حزب اللہ کو استعمال نہیں کرے گا

“بدلہ آنے والا ہے”

کل ہفتے کے روز ایران نے دمشق میں اسرائیلی حملے کا جواب دینے کی دھمکی کا اعادہ کیا۔

یکم اپریل کوہونے والے اس خوفناک حملے میں ایرانی پاسداران انقلاب کے سینیر افسران سمیت کم سے کم سات ایرانی مارے گئے تھے۔

ایرانی مسلح افواج کے چیف آف جنرل اسٹاف میجر جنرل محمد باقری نے کہا تھا کہ “جوابی کارروائی مناسب وقت پر، منصوبہ بندی کے ساتھ کی جائے گی اور دشمن کو زیادہ سے زیادہ نقصان پہنچایا جائے گا‘‘۔ انہوں نے مزید کہا کہ آپریشن کے وقت اور پلان کا تعین ہم ہی کرتے ہیں۔

باقری کے بیانات گذشتہ روز ایران کے وسطی شہر اصفہان میں سفارت خانے خانے پر حملے میں ہلاک ہونے والے میجر جنرل محمد رضا زاہدی کی آخری رسومات کے دوران سامنے آئے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *