April 20, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/rubbernurse.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253
A cabin crew member is seen near a Batik Air A-330 airplane before take-off to pick up Indonesian citizens at Wuhan, at Soekarno-Hatta International Airport in Tangerang near Jakarta, Indonesia. (File photo)

انڈونیشیا کی فضائی کمپنی باٹک کا ایک جہاز 25 جنوری کو اندرونی پرواز پر محو سفر تھا۔ اس وقت جہاز کے کاک پٹ میں موجود دونوں پائلٹ سو گئے۔ تاہم جہاز حادثے سے بچ گیا۔ دونوں پائلٹس کو کاک پٹ میں دوران پرواز سو جانے پر معطل کر دیا گیا ہے۔

باٹک کی پرواز 6723 کینڈاری سے جکارتہ جا رہی تھی۔ جہاز میں 153 مسافر موجود تھے۔ دوران پرواز شریک پائلٹ نے پائلٹ سے کہا کہ وہ آرام کر لے کیونکہ جکارتہ سے کیلنڈری کی پرواز کے دوران اس کے ساتھی پائلٹ کو مناسب آرام نہیں مل سکا تھا۔

نیشنل ٹرانسپورٹیشن سیفٹی کمیشن کے مطابق پائلٹ اور شریک پائلٹ دونوں نے ٹریفک کنٹرولر کی طرف سے ہونے والی بات چیت کا جواب نہیں دیا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ جہاز جکارتہ سے گزر کر بحر ہند کی طرف پرواز شروع کر چکا تھا۔ اس لیے دونوں پائلٹس سے رابطہ نہ ہونے کے بعد ائیر بس A 320 سے رابطہ کیا گیا۔

پائلٹ نیند سے بیدار ہو اتو اس نے دیکھا کہ شریک پائلٹ بھی سو چکا ہے اور پرواز درست سمت میں نہیں جا رہی ہے۔ ابتدائی تحقیقیاتی رپورٹ میں پائلٹس کے دوران پرواز سو جانے کے واقعے کو سنگین واقعہ کہا گیا ہے اور دونوں کو معطل کر دیا گیا ہے۔

باٹک ایئر نے ہفتہ کے روز جاری کردہ بیان میں کہا ہے عملے کے لیے مانسب آرام کی پالیسی کے ساتھ ساتھ اس بات کو بھی یقینی بنایا جا رہا ہے کہ وہ ذہنی و جسمانی اعتبار سے ٹھیک ہوں تاکہ فرائض کی انجام دہی بہتر انداز میں کر سکیں۔

خیال رہے 2018 میں لائن ایئر کمپنی کا بوئنٹ 737 میکس 8 طیارہ جکارتہ سے ٹیک آف کرنے کے فوری بعد گرا اور تباہ ہوگیا تھا۔ جس میں موجود 189 مسافر موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے۔ تحقیقات کے دوران معلوم ہوا کہ جہاز میں ڈیزائن کی خرابی کے باعث یہ حادثہ پیش آیا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *